اپنائے جو شخص بھی سنت رسولؐ کی

اپنائے جو شخص بھی سنت رسولؐ کی
ہوگئی اُسے نصیب شفاعت رسولؐ کی

پردہ کیے حضورؐ کو صدیاں گزر گئیں
ہے آج بھی دلوں پہ حکومت رسولؐ کی

ہو کر رہے گا دیکھنا اِسلام کا فروغ
پوری ضرور ہوگی بشارت رسولؐ کی

ایمان بھی ملا ہمیں قرآن بھی ملا
دولت ملی یہ ہم کو بدولت رسولؐ کی

سر پیٹتی رہے گی یونہی سر پھری ہوا
روشن رہے گی شمعِ ہدایت رسولؐ کی

ہوگا ہر اِک بشر کو قیامت کا سامنا
سایہ فگن نہ ہوگی جو رحمت رسولؐ کی

بوجہل کے غلام بہت سے ہیں آج بھی
ملتی نہیں ہے سب کو ہدایت رسولؐ کی

اِنسانیت کو مل نہ سکے گی کہیں اَماں
نافذ اگر نہ ہوگی شریعت رسولؐ کی

اعجازؔ بس یہی تو ہے مقصد حیات کا
اللہ چاہتا ہے اِطاعت رسولؐ کی