بعثتِ رسولؐ ہو گئی

بعثتِ رسولؐ ہو گئی
لو دُعا قبول ہو گئی

آسماں بدوش کہکشاں
راستے کی دُھول ہو گئی

آپؐ سے ہوئی جو دوستی
دشمنی ملول ہو گئی

آپؐ نے جو بات بھی کہی
بات وہ اصول ہو گئی

نفرتوں کی آگ بجھ گئی
رُت خزاں کی پھول ہو گئی

آپؐ کے جو در سے دور ہوں
مجھ سے کوئی بھول ہو گئی

جب کبھی درود پڑھ لیا
مدحتِ رسولؐ ہو گئی

چھوڑ کر دیارِ مصطفیؐ
زندگی فضول ہو گئی

نعتِ مصطفیؐ جو کی رقم
دادِ رب وصول ہو گئی