علم ملا، تہذیب ملی، اسلام ملا ، قرآن ملا

علم ملا، تہذیب ملی، اسلام ملا ، قرآن ملا
آپؐ کے صدقے سرورِ عالمؐ دنیا کو ایمان ملا

سب کی عظمت اپنی جگہ ہے جتنے نبی ہیں جتنے رسول
آپؐ کے جیسا کوئی نہ ہم کو محبوبِؐ رحمان ملا

دنیا کی تاریخ ہے شاہد ملتی نہیں ہے ایک مثال
شاہِ اممؐ کے جیسا کوئی آج تلک انسان ملا

شرک کی شعلہ بار فضا میں پھول کھلائے وحدت کے
موت کی وادی میں لوگوں کو جینے کا امکان ملا

آپؐ سے بڑھ کر کوئی نہیں ہے، کوئی نہیں ہے، کوئی نہیں
جاگ اٹھا اس کا بھی مقدر آپؐ سے جو بھی آن ملا

صلی اللہ علیہ وسلم پڑھ کے اٹھائی جب پتوار
ساحل کی خوش خبری بن کر دریا میں طوفان ملا

آپؐ نے اپنے رب کا تعارف اس انداز سے پیش کیا
بھٹکے ہوئے جو لوگ تھے ان کو خالق کا عرفان ملا

پاس ہمارے کچھ بھی نہیں تھا بالکل خالی دامن تھا
ہم سے گناہگاروں کو آقاؐ بخشش کا سامان ملا

صدیقؓ و فاروقؓ کے صدقے عثمانؓ و حیدرؓ کے نثار
بعدِ رسولؐ اکرم ہم کو ان کا بھی فیضان ملا

شکر کریں جتنا بھی رب کا کم ہے بہت اعجازؔ وہ کم
ہم نے رسولؐ بھی اعلیٰ پایادین عظیم الشان ملا