داخلِ رحمتِ مصطفیؐ ہو گئے

داخلِ رحمتِ مصطفیؐ ہو گئے
لوگ اللہ سے آشنا ہو گئے

اِک نئی سوچ ذہنوں کو دی آپؐ نے
جو گناہگار تھے پارسا ہو گئے

ہر خطا بخش دی اُس کی اللہ نے
مہرباں جس پہ خیرالوریٰؐ ہو گئے

اُن کو عزت ملی، اُن کو شہرت ملی
آپؐ کے نام پر جو فدا ہو گئے

قافلے منزلوں پہ پہنچنے لگے
رہنما آپؐ کے نقشِ پا ہو گئے

آپؐ نے صبر کی ایسی تعلیم دی
غم کے لمحے بھی راحت فزا ہو گئے

یہ شعور آدمی کو دیا آپؐ نے
بے ادب بھی ادب آشنا ہو گئے

سارے عالم کو راحت ملی آپؐ سے
ہر مصیبت سے اِنساں رہا ہوگئے

آپؐ نے سب کو درسِ اُخوت دیا
منتشر لوگ تھے ایک جا ہو گئے

آسماں سے بلند اُن کا رتبہ ہے جو
خاک پائے رسولؐ خدا ہو گئے

دل منور ہوئے آپؐ کے نور سے
جہل کے آئینے بے جِلا ہو گئے

ہے یہ اعجازؔ اعجازِ خیرالبشرؐ
مرکزِ ہر نظر مصطفیؐ ہو گئے