ایسا کرم ہوا ہے دیارِ رسولؐ میں

ایسا کرم ہوا ہے دیارِ رسولؐ میں
ہر غم گریز پا ہے دیارِ رسولؐ میں

خوشبو کا در کھلا ہے دیارِ رسولؐ میں
مہکی ہوئی فضا ہے دیارِ رسولؐ میں

در در کی خاک چھان لی راحت نہ مل سکی
دل کو سکوں ملا ہے دیارِ رسولؐ

اللہ سے جو مانگنا چاہو وہ مانگ لو
مقبول ہر دُعا ہے دیارِ رسولؐ میں

جس کو یقیں نہیں ہے وہ خود جاکے دیکھ لے
رحمت کی انتہا ہے دیارِ رسولؐ میں

ہوتا نہیں زبان سے اظہارِ مدّعا
ہر اشک بولتا ہے دیارِ رسولؐ میں

جو زندگی گزر گئی وہ زندگی نہ تھی
احساس یہ ہوا ہے دیارِ رسولؐ میں

آنکھوں میں اشک لب پہ دُرود و سلام ہے
میرا یہ مشغلہ ہے دیارِ رسولؐ میں

شعلے نکل رہے ہیں برائی کے جسم سے
ظلمت چراغ پا ہے دیارِ رسولؐ میں

پوری ہر ِاک مراد مرے دل کی ہوگئی
اللہ مل گیا ہے دیارِ رسولؐ میں

آسودۂ کرم کہیں اعجازؔ تو نہیں
یہ کون سو رہا ہے دیارِ رسولؐ میں