جتنے جاتے ہیں سوئے حرم راستے

جتنے جاتے ہیں سوئے حرم راستے
راستے ہیں وہ سب محترم راستے

جن پہ چلنا ہے لازم ہمارے لیے
آپ کے ہیں وہ شاہِؐ امم راستے

مصطفیؐ سے نہیں جن کو نسبت کوئی
کر دیے رب نے وہ کالعدم راستے

آخرش مجھ کو شہرِ نبیؐ مل گیا
کر لیے میں نے طے جب اہم راستے

یہ کرم بھی ہے معراجِ سرکارؐ کا
ہیں خلاؤں کے زیرِ قدم راستے

جس طرف سے ہوا مصطفیؐ کا گزر
بن گئے ہیں وہ رشکِ ارم راستے

یاد جب آ گئے گیسوئے مصطفیؐ
آ گئے زیرِ ابرِ کرم راستے

جب مدینے کا میں نے تصور کیا
ہو گے خود بخود کم سے کم راستے

ان پہ چلنا ہی انساں کی معراج ہے
دے گئے ہیں جو شاہِؐ امم راستے

کوئے خیرالبشر کیا قریب آ گیا
ہیں معطر خدا کی قسم راستے

ذاتِ خیرالبشرؐ سے ہیں سب منسلک
وہ جو قرآن میں ہیں رقم راستے

پیرویٔ نبیؐ کا یہ اعجازؔ ہے
بن گئے میرے نقشِ قدم راستے