خیر کے گل، علم کے گوہر دیے

خیر کے گل، علم کے گوہر دیے
مصطفیؐ نے سب کے دامن بھر دیے

روشنی ذہنوں کو بخشی آپؐ نے
جل رہے ہیں علم کے گھر گھر دیے

پیاس کے مارے ہوؤں کو آپؐ نے
کوثر و تسنیم کے ساغر دیے

سوچ کے دھارے بدل کر آپؐ نے
فکر کے طائر کو بال و پر دیے

منفرد قول و عمل سے آپؐ نے
فلسفے باطل کے سب رد کر دیے

کر دیا سرکارؐ نے ان کو معاف
رنج جن لوگوں نے تھے اکثر دیے

آپ نے اصحاب کی صورت حضورؐ
کیسے کیسے نور کے پیکر دیے

راہِ حق میں آپؐ کے احکام پر
کتنے انسانوں نے اپنے سر دیے

آپؐ کی عظمت کے روشن ہیں چراغ
بجھ گئے ہیں کتنے جل جل کر دیے

علم کی شمعیں جلا کر آپؐ نے
زندگی کے مسئلے حل کر دیے

یہ بھی ہے اعجازؔ اعجازِ رسولؐ
آدمی کو خلق کے جوہر دیے