یہ جو ہے صبح و شام کی خوشبو

یہ جو ہے صبح و شام کی خوشبو
مصطفیؐ کے ہے نام کی خوشبو

اپنے محبوب کی دو عالم میں
رب تعالیٰ نے عام کی خوشبو

تو مدینے سے آئی ہے جو صبا
تو نے کس کس کے نام کی خوشبو

کھینچ لائی ہے مجھ کو جنت تک
ایک کوثر کے جام کی خوشبو

جو ازل سے ہے تا ابد قائم
ہے درود و سلام کی خوشبو

ہے جو منسوب اس پسینے سے
بس وہ خوشبو ہے کام کی خوشبو

دل نے محسوس کی مدینے میں
جسمِ خیر الانام کی خوشبو

دستکیں دیتی ہیں جو ذہنوں پر
ہے وہ ان کے کلام کی خوشبو

روشنی کی طرح سفر میں ہے
کوئے خیر الانامؐ کی خوشبو

مصطفیؐ کے وجود پر اعجازؔ
میرے رب نے تمام کی خوشبو