وہ جو بتلا گئے ہیں نبیؐ راستا

وہ جو بتلا گئے ہیں نبیؐ راستا
اس سے بہتر نہیں ہے کوئی راستا

نقشِ پائے رسولِؐ خدا پر چلو
باغِ فردوس کا ہے یہی راستا

رابطہ جس کا ہے گنبدِ سبز سے
محترم ہے وہی آج بھی راستا

رہنما میری خوشبو ہے سرکارؐ کی
مجھ کو لگتا نہیں اجنبی راستا

ہر قدم راہ طیبہ میں احساس ہے
جیسے بتلا رہا ہے کوئی راستا

وہ تو کہیے کہ محبوبِؐ رب آگئے
آدمی کو نہ ملتا کبھی راستا

اک خدا ایک قرآن ہے اک نبیؐ
ایک منزل ہے اور ایک ہی راستا

نا امیدو! مدینے کی جانب چلو
تک رہی ہے وہاں زندگی راستا

تم مدینے کا قصدِ سفر تو کرو
تم کو دکھلائے گی روشنی راستا

یہ جنونِ مدینہ کا اعجازؔ ہے
مجھ سے پوچھے ہے ہر آدمی راستا