شعلوں کے راستے بھی آساں بنا دیے ہیں

شعلوں کے راستے بھی آساں بنا دیے ہیں
سرکارؐ نے کرم کے سائے بچھا دیے ہیں

دنیائے رنگ و بو میں سیرت نے مصطفیؐ کی
آداب زندگی کے ہم کو سکھا دیے ہیں

دنیا سے تا بہ محشر انسانیت کی خاطر
آقاؐ نے رحمتوں کے دریا بہا دیے ہیں

آقاؐ نے چن لیے ہیں کانٹے برائیوں کے
اچھائی کے گلوں سے رستے سجا دیے ہیں

اخلاق مصطفیؐ نے وہ معجزے دکھائے
آپس میں تھے جو دشمن بھائی بنا دیے ہیں

تعلیمِ مصطفیؐ سے روشن ہوا زمانہ
آئینے فکر و فن کے سب جگمگا دیے ہیں

جن راستوں پہ چل کر جنت ہمیں ملے گی
سرکارؐ نے ہمیں وہ رستے بتا دیے ہیں

دنیا و آخرت کی اس کو ملی ضمانت
جس نے قدم نبیؐ کی جانب بڑھا دیے ہیں

اعجازؔ ہے یہی تو اعجاز مصطفیؐ کا
ذرّے بھی مصطفیؐ نے سورج بنا دیے ہیں