سارے آقاؤں کے آقاؐ کالی کملی والے ہیں

سارے آقاؤں کے آقاؐ کالی کملی والے ہیں
یعنی ہر بارات کے دولہا کالی کملی والے ہیں

سب سے بڑا احسان خدا کا کالی کملی والے ہیں
دھوپ کا موسم ہو تو سایہ کالی کملی والے ہیں

ان سے ملنا، ان سے باتیں کرنا ہے آسان بہت
قرآن کے اوراق میں زندہ کالی کملی والے ہیں

ان سے کٹ کر رہنے والا جنت کا حقدار نہیں
کیونکہ جنت کا دروازہ کالی کملی والے ہیں

ان کے مراتب کا ہم کو اندازہ ہو تو کیسے ہو
کہتے ہیں کعبے کا کعبہ کالی کملی والے ہیں

آؤ ہم بھی اپنی پیاسی روحوں کو سیراب کریں
علم و ہنر کا بہتا دریا کالی کملی والے ہیں

اہلِ ایماں تک ہی ان کا فیض و کرم محدود نہیں
ہر انساں کے غم کا مداوا کالی کملی والے ہیں

ساری دنیا کے ہونٹوں پر کیوں نہ ستائش ہو ان کی
ساری دنیا کا سرمایہ کالی کملی والے ہیں

شہرِ علم کا تاج سجایا رب نے ان کے ماتے پر
داناؤں میں سب سے دانا کالی کملی والے ہیں

کتنے بڑے اعزاز سے مجھ کو رب نے نوازا ہے اعجازؔ
میرے مولا، میرے آقاؐ کالی کملی والے ہیں