سرور عالم پہ ہے قرآن اُترا حرف حرف

سرور عالم پہ ہے قرآن اُترا حرف حرف
جس کا ایک اک لفظ لاثانی ہے یکتا حرف حرف

نعتِ سرکار دو عالمؐ کا تقاضہ ہے یہی
با وضو ہو کر لکھے ہر لکھنے والا حرف حرف

بے بصیرت کے لیے ہیں دائرے الفاظ کے
ورنہ سیرت میں نبیؐ کی ہے اجالا حرف حرف

مدحتِ محبوبؐ داور ہے مرے پیشِ نظر
لکھ رہا ہوں سرورِؐ دیں کا سراپا حرف حرف

میم لکھو، دال لکھو، ی لکھوں اور نون ہ
وشنی کا اک سمندر ہے مدینہ حرف حرف

برسرِ قرطاس لکھو میم، ح، اور میم، دال
سامنے اک سیلِ رنگ و نور ہوگا حرف حرف

یادِ سرکارِ مدینہ حرزِ جاں ہے رات دن
مصطفیٰؐ ہی مصطفیٰؐ ہے دل پہ لکھا حرف حرف

ذکرِ سرکارِ دو عالم ہے ازل سے تا ابد
حضرتِ آدمؑ سے تا عیسیٰؑ ملے گا حرف حرف

دیکھ لو کوئی صحیفہ، پڑھ لو قرآن مبیں
تذکرہ دنیا کا ہوگا ذکرِ عقبیٰ حرف حرف

میں کہ ہوں اعجازؔ مداّحِ شہنشاہِ اُممؐ
سرورِ عالم کا لکھتا ہوں قصیدہ حرف حرف