ذاتِ سرورؐ ہے واقعی رحمت

ذاتِ سرورؐ ہے واقعی رحمت
کل بھی رحمت تھی آج بھی رحمت

زائرانِ حرم کو طیبہ میں
ڈھونڈتی ہے گلی گلی رحمت

جب بھی میں نے پڑھا درود و سلام
بن گئی میری زندگی رحمت

ذکرِ سرکارؐ جب بھی زمیں پر چھڑا
آسماں سے برس پڑی رحمت

کام آتی ہے جو ہر انساں کے
ایسی رحمت ہے آپ کی رحمت

پیرویٔ رسولؐ کے صدقے
موت رحمت ہے، زندگی رحمت

میں نے طیبہ میں جب قدم رکھا
ہر گھڑی میرے ساتھ تھی رحمت

مجھ گنہگار کے بحمداللہ
حشر میں کام آئے گی رحمت

نعت لکھنے سے یہ ہوا اعجازؔ
بن گئی میری شاعری رحمت