اجلے جلے سب کے چہرے سب کے دامن پاک صاف

اجلے جلے سب کے چہرے سب کے دامن پاک صاف
یہ مدینے کی فضا ہے کتنی روشن پاک صاف

ایک کانٹا بھی برائی کا جہاں ملتا نہیں
سیرتِ سرکارؐ کا ہے ایسا گلشن پاک صاف

بچ کے گزرے مصطفیؐ دلدل سے کفر و شرک کی
آپ نے رکھا ہمیشہ اپنا دامن پاک صاف

بادشاہوں کا لباسِ فاخرہ کچھ بھی نہیں
سرورِ دو عالمؐ کی کچھ ایسی تھی اُترن پاک صاف

ماننے والے ہیں جتنے بھی رسولؐ اللہ کے
ہر گھڑی رکھتے ہیں اپنے دل کا درپن پاک صاف

جو عمل کرتے ہیں سنت پر رسولؐ اللہ کی
وہ تو رکھتے ہیں ہمیشہ اپنا تن من پاک صاف

یاد ہے اعجازؔ جس کو بھی حدیثِ مصطفیٰؐ
دوستو! رکھتے ہیں وہ اپنا گھر آنگن پاک صاف