مصطفیؐ کی کوئی مثال کہاں

مصطفیؐ کی کوئی مثال کہاں
کوئی ان سا ہے باکمال کہاں

نقشِ پا جس کے چاند سورج ہوں
اس کی کونین میں مثال کہاں

آپؐ کی خاک پا سے بھی کمتر
میں کہاں اور مرا خیال کہاں

آپؐ نے وقت کی روش بدلی
تھا زمانہ کو اعتدال کہاں

آپؐ کے در کو چھوڑ کر آقاؐ
جاؤں گا میں شکستہ حال کہاں

میرا دارالشفا مدینہ ہے
اور زخموں کا اندمال کہاں

کوچۂ مصطفیؐ میں خوش ہوں میں
ڈھونڈتا ہے مجھے ملال کہاں

میں گدائے رسولؐ، جانتا ہوں
پورا ہوگا مرا سوال کہاں

وہ جو تھے مصطفیؐ کے وقت اعجازؔ
دن کہاں اب وہ ماہ و سال کہاں