تقاضہ ہے یہ دانش کا دیانت سے اگر لکھیں

تقاضہ ہے یہ دانش کا دیانت سے اگر لکھیں
ہر اک اچھائی کو ہم اسوۂ خیرالبشرؐ لکھیں

فلک پر کہکشاں لکھیں، ستارہ عرش پر لکھیں
زمیں پر ان کے نقشِ پا چراغِ رہگزر لکھیں

بصارت کا یہ منصب ہے بصیرت کا تقاضا ہے
دیارِ گنبدِ خضرا کو فردوسِ نظر لکھیں

دم تحریر کم سے کم خیال اتنا ضروری ہے
ہم ان کی شان میں جو حرف لکھیں معتبر لکھیں

یہیں نام مبارک ہے چراغ خانہ ہستی
بجز نامِ مبارک کیا در و دیوار پر لکھیں

بیادِ سرورِ عالمؐ ٹھہر جائے جو پلکوں پر
اس اک اشکِ محبت کو متاعِ چشم تر لکھیں

اسی باعت تو ہے کونین میں توقیر انساں کی
محمدؐ کے بشر ہونے کو معراجِ بشر لکھیں

نبیؐ کی ذات ہر عنوان سے رحمت ہی رحمت ہے
عطا لکھیں، کرم لکھیں، دعا لکھیں، اثر لکھیں

حرم سے روضۂ خیرالبشر تک ہیں حدیں اس کی
وہ منزل جس میں جبریلِ امیںؑ کو ہمسفر لکھیں

محبت مصطفیؐ سے خوب ہے اعجازؔ اپنی بھی
عمل کرتے نہیں لیکن قصیدے عمر بھر لکھیں