تعلیمِ محمدؐ سے جس گھر میں چراغاں ہے

تعلیمِ محمدؐ سے جس گھر میں چراغاں ہے
اُس گھر کا ہر اِک گوشہ فردوس بداماں ہے

ہاتھوں میں اگر لوگو! سرکارؐ کا داماں ہے
مشکل سے گزر جانا، مشکل نہیں آساں ہے

انسان نئے اِزموں کے سائے میں ہے جس دن سے
تاریخ کے چہرے سے اِک کرب نمایاں ہے

ہر کام میں اچھائی، ہر بات میں سچائی
جس کا یہ وطیرہ ہے وہ شخص مسلماں ہے

دونوں کی فضیلت سے انکار نہیں ممکن
خاموش ہے اک قرآں ایک بولتا قرآں ہے

اُس رحمتِؐ عالم کی وسعت تو کوئی دیکھے
ایک قطرہ سمندر ہے، اِک پھول گلستاں ہے

دنیا کو بغیرِ دیں آساں نہ سمجھ لینا
ہر وقت سمندر میں اندیشۂ طوفاں ہے

ہم دوشِ ثریا ہے، ہر نقشِ قدم اُن کا
طیبہ کا ہر اِک ذرّہ خورشید بداماں ہے

کس درجہ ہے شائستہ دیوانہ محمدؐ کا
وحشت کے زمانے میں محفوظ گریباں ہے

اعجازؔ نہ ہو رہبر سیرت جو محمدؐ کی
انساں کے بھٹکنے کا ہر گام پہ امکاں ہے