کہہ دو کہ ٹھہر جائے یہیں وقتِ رمیدہ