اللہ کائنات کا واحد کفیل ہے

اللہ کائنات کا واحد کفیل ہے
ذاتِ رسولؐ کیا ہے سبب ہے سبیل ہے

ہم پر جو مہربان وہ ربِّ جلیل ہے
یہ بھی حضورؐ ہی کے کرم کی دلیل ہے

بیکار ہے اگر کوئی انساں جمیل ہے
سیرت نبیؐ کی حسنِ بشر کی دلیل ہے

رہتی ہے میرے ساتھ ہمہ وقت روشنی
لب پہ مرے حضورؐ کا ذکرِ جمیل ہے

اللہ کے رسولؐ کی ہم پیروی کریں
جنت کے داخلے کی یہی اِک سبیل ہے

اب خضرؑ کے بغیر ہی کٹ جائے گا سفر
ہر نقشِ پا حضورؐ کا اِک سنگِ میل ہے

پہنچے ہیں آج چاند پہ انسان کے قدم
معراجِ مصطفیٰؐ کی یہ روشن دلیل ہے

دولت کوئی بڑی نہیں خلقِ رسولؐ سے
دنیا کی ہر متاع، متاعِ قلیل ہے

جیسے رسولِ پاکؐ ہیں اِس کائنات میں
منصف ہے ایسا کوئی نہ کوئی عدیل ہے

سن کر نبیؐ کا نام جو پڑھتا نہیں درود
ارشادِ مصطفیٰؐ ہے وہ انساں بخیل ہے

اتنی سی بات وجہِ تسلی ہے حشر میں
اللہ کا حبیبؐ ہمارا وکیل ہے

جس کو رسولِ پاکؐ کی سیرت سے ہے گریز
وہ شخص اپنی ذات کے اندر علیل ہے

چُھوٹا ہے جب سے دامنِ محبوبِؐ کبریا
دنیا میں جس جگہ ہے مسلماں ذلیل ہے

اعجازؔ کا بھی حشر میں رکھ لیجیے بھرم
فہرست اُس کے جرم کی بے حد طویل ہے