جشنِ رسول پاک منانے کا وقت ہے

جشنِ رسول پاکؐ منانے کا وقت ہے
لوگو! یہ انقلاب کے آنے کا وقت ہے

تفریق کے چراغ بجھانے کا وقت ہے
حبِّ نبیؐ کی شمعیں جلانے کا وقت ہے

دیوار نفرتوں کی گرانے کا وقت ہے
اک دوسرے کا بوجھ اٹھانے کا وقت ہے

زندہ کرو زمانے میں رسمِ جہاد کو
لوگو یہ کشتیوں کے جلانے کا وقت ہے

دنیا کا کوئی اِزم نہ دے گا اماں تمہیں
طیبہ کی سمت لوٹ کے جانے کا وقت ہے

!بیرونی آندھیوں سے نہ گھبراؤ دوستو
یہ وقت ہی چراغ جلانے کا وقت ہے

ہے مدحتِ رسولؐ لبِ عندلیب پر
بادِ صبا یہ پھول کھلانے کا وقت ہے

ٹھہری ہوئی ہے وقت کی رفتار کس لیے
یہ مصطفیٰؐ کے عرش پہ جانے کا وقت ہے

پھیلی ہوئی ہے روشنی ذکرِ رسولؐ کی
اِس روشنی سے فیض اُٹھانے کا وقت ہے

شاید کسی کے دل میں اُتر جائے کوئی بات
پیغام مصطفیٰؐ کا سنانے کا وقت ہے

اعجازؔ آج نغمۂ نعتِ رسولؐ سے
سوئے ہوئے دلوں کو جگانے کا وقت ہے